Skip to content Skip to left sidebar Skip to footer

Tehsil Mandi Bahauddin

mojianwala

Mojianwala موجیانوالہ

Mojianwala موجیانوالہ

By: Hassan

Village History:

The Village Mojianwala موجیانوالہ is located on the boundary of District Mandi Bahauddin and District Gujrat. It is an old town and famous for its majority population belongs to Shia sector. Almost all of the residents belong to this sect. It is famous for its Azadari world wide. Commonly it is famous as Chilalianwala, Mojianwala as both villages are connected.

Main Casts:

  • Gujjar
  • Syed
  • Mochi
  • Tarkhan
  • Jogi

etc.

mojianwala

Highly Qualified Personalities:

  1. Husnain Abbas Kazmi (currently serving as Senior Civil Judge)
  2. Syed Raees Naqvi (First CSP of Mojianwala currently he is serving in Lahore)
  3. Ch. Zafar Iqbal (Additional Session Judge)
  4. Syed Hasan Raza (Deputy District Prosecutor)

Social Welfare Organizations

  • Helping Hands

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by: Hassan

Email Address: alex.smith2694@gmail.com

نوٹ: کسی بھی قسم کی درستگی کیلئے کمنٹس کریں یا ہمیں ای۔میل کریں۔ شکریہ

Kot islam mandi bahauddin

Kot Islam کوٹ اسلام

Kot Islam کوٹ اسلام

By: Moazzam Tufail

History:

Village Kot Islam کوٹ اسلام located in tehsil and district Mandi Bahudain this village is historical. Pakistan banny se Phely ader Sikh rety they bad main wo Hindustan chaley gey aor Muslim abaad ho gey. Is ki population 1,800 tak ha. source of income 40% agriculture and 60% People abroad France, Spain, Italy, Greece.

Main Casts:

  • Dillowane
  • Gondal
  • Gujjar
  • Hujjan
  • Sayyed
  • Mian
  • Warraich

Social Personalities:

  1. Riaz Ahmad Gondal (advocate)
  2. Riaz Ahmad Hujjan (counselor)
  3. Tasawar Iqbal Hajjan
  4. Moazzam Tufail Gondal
  5. Ijaz Ahmad Gondal
  6. Ghulam Raza (Lamberdar)
  7. Syed Ajmal Shah
  8. Shehzad Ahmad (Girdawar)
  9. Zaka Ullah Warraich
  10. Hassan Fiaz Gondal
  11. Saqib Ijaz Gondal (South Africa)

Highly Qualified Personalities:

  1. Riaz Ahmad Gondal (Advocate)
  2. Moazzam Tufail Gondal (Civil Engineer In Bahrain)
  3. Hafiz Hassan Riaz Gondal (Advocate High Court)
  4. Dr. Tanzeela Riaz (P.hD)
  5. Imran Tufail Gondal (France)
  6. Main Akhtar (Advocate)
  7. Khurrm Shahzad
  8. Naveed Ul Hassan
  9. Aqib Ijaz Gondal (Electric Engineer)
  10. Mohsin Raiz Gondal (Software Engineer)

Kot islam mandi bahauddin

Social Welfare Organizations

  • Kot Islam Welfare Committee
  • Kot Islam Melad Committee

Schools and Colleges

  • Govts Girl High School

Main Crops:

  • Wheat
  • Rice
  • Sugar

Sports:

  • Kabaddi
  • Cricket

Problems of the Village:

  1. Gas
  2. Dispensary
  3. Transport
  4. Education
  5. Madrisa

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by Moazzam Tufail

Email Address: mozaimtufailgondal55678@gmail.com

Contact No. 923443503499

Please comment for any correction or send us email. Thank you

Chak No. چک نمبر 13 (Chokananwali)

Chak No. 13 (Chokananwali)

Chak No. 13 (Chokananwali) چک نمبر 13

By: Fiaz Ahmad Warraich

!تاریخی پس منظر

۱۸۵۷ کے بعد برصغیر پر برطانوی راج قائم ہوا تو انگریز حکومت نے پنجاب کا زرعی سروے کیا تو پتہ چلا کہ پنجاب کا بڑا حصہ پہاڑی ریگستانی اور تھلوں کی سر زمین ہے۔ یہ تمام اراضی کراؤن لینڈ قرار دی گئی اس بنجر زمین کو کارآمد بنانے کے لیے انگریز حکومت نے نہری نظام کا عظیم منصوبہ بنایا اور اسی منصوبے کے تخت۔ ۱۹۱۳میں اپر جہلم نہر دریائے جہلم سے نکالی گئی۔ اسکا مقصد گجرات منڈی بہاوالدین اور سرگودھا کے غیر آباد میدانی علاقوں کو سیراب کرنا تھا۔ اس نہر کی کھدائی کے دوران ہزاروں ایکڑ اراضی زیر آب آئی۔ جن لوگوں کی زمینیں نہر میں آئی انھیں برطانوی حکومت نے متبادل رقبے الاٹ کیے اور ایک بہت بڑی لوگوں کی آبادی ہجرت کرنے پر مجبور ہوئی۔ ہمارے آباء واجداد بھی انھیں لوگوں میں سے تھے۔ انھیں منڈی بہاوالدین میں Chak No. 13 چک ۱۳ کہ مقام پر رقبے الاٹ ہوئے اور یہاں آ کر آباد ہوگئے۔

آبادکاری

گاؤں کی تمام آلاٹ شدہ اراضی غیر آباد تھی ہر طرف گھاس پھوس اور جھاڑیاں ہی جھاڑیاں تھیں جہاں آکی اور بھچر کے مقامی لوگ بھینس چرایاں کرتے تھے۔ جسے یہاں کہ کسانوں نے اپنی انتھک محنت اور کڑی مشقت کہ بعد آباد کیا اور قابلِ کاشت بنایا تاکہ گاؤں کی معاشی سرگرمیوں کا پہیہ چل سکے۔

جغرافیہ

یہ مین سرگودھا روڈ سے ۶ کلومیٹر کے فاصلے پر مغرب کی جانب واقع ہے۔ اس کے مشرق میں شیخ چگانی مغرب میں آکی جنوب میں بھچر اور شمال میں چک نمبر ۱۲واقع ہیں۔

رقبہ

گاؤں کا مجموعی زرعی رقبہ تقریباً ۳۷مربعے ہے جس جگہ پر گاؤں آباد ہے یہ مربع نمبر ۲۲ ہے۔

آبادی

۲۰۲۳کی مردم شماری کے اعداد و شمار کے مطابق کل آبادی ۲۵۰۰اور گھرانوں کی تعداد ۳۰۰ہے

چوکنانوالی کی وجہ تسمیہ

اپر جہلم کی تعمیر کے دوران گجرات کے بہت دیہات متاثر ہوئے۔ انھیں متبادل رقبے الاٹ کر مختلف چکوں میں بسایا گیا جو لوگ چک ۱۳ میں آ کر آباد ہوئے ان میں اکثریت کا تعلق گجرات کے گاؤں چوکنانوالی سے تھا۔ اس وجہ سے یہ چک ۱۳ سے چوکنانوالی کہلانے لگا۔

برادریاں اور خاندان

یہاں پر مختلف برادریوں کے لوگ آباد ہیں اور مختلف پیشوں سے وابستہ ہیں جو اپنی معاشی اور معاشرتی ضروریات کے لیے ایک دوسرے پر انخصار کرتے ہیں۔ گاؤں کی سب سے بڑی برادری وڑائچ برادری ہے۔ اس علاؤہ

سادات

دھوتھڑ

گجر

چمیے

دھدرا

مچھیانے

گوندل

ملک

راجے

سپرا

مرزے

چوہان

انصاری

کمہار

مراسی

دھبے

ترکھان

بیگ

نائی

دیندار

ماچھی

مسلم شیخ

بھی آباد ہیں۔ ہر برداری مختلف خاندانوں میں تقسیم ہو جاتی ہے جو اپنی الگ الگ شناخت رکھتے ہیں جو عموماً خاندان کے بزرگ یا مشہور شخصیت کے نام پر ہوتی ہے۔ ان خاندانوں میں دادان کے سلطان کے داد کے فضل کے جمعہ کے میاں خاں کے میر داد کے شابل کے جمال دین کے سارو کے حاکو کے بوسال لمبر پھیلے دھروکوٹی چوھدرنے شامل ہیں ۔

ذریعہ معاش

معاش انسانی زندگی کا بنیادی جز ہے۔ دنیا میں زندگی گزارنے والا ہر انسان کوئی نہ کوئی ذریعہ معاش ضرور اختیار کرتا ہے۔ یہاں کی اکثریتی آبادی زمیندار ہے جو زراعت پیشے سے وابستہ ہیں جو کھیتی باڑی کے علاؤہ مال مویشی پالتے ہیں۔ کچھ پڑھے لکھے افراد گورنمنٹ سروس بھی کرتے ہیں جن میں محکمہ تعلیم اور پاک فوج کے شعبے قابل ذکر ہیں۔ اس کہ علاوہ ہنر مند افراد کی بہت بڑی تعداد بیرون ممالک میں مقیم ہے جن میں سعودی عرب دوبئی بحرین پرتگال سپین فرانس اٹلی جرمنی آسٹریلیا شامل ہیں ۔

مشاہیر

بابا اللہ لوک وڑائچ

بابا اللہ لوک وڑائچ اپنے زمانے کے مشہور پہلوان تھے۔ آپ قرب وجوار میں منعقد ہونے والے میلوں میں ویٹ لفٹنگ کے مقابلوں میں حصہ لیتے ۔آپ نے آکی میں منعقد ہونے والے اک مقابلے میں منڑی مٹی اٹھانے کا اعزاز اپنے نام کیا اور اپنے ہم عصر پہلوانوں میں اپنی منفرد پہچان بنائی جب گاؤں آباد ہوا تو گاؤں کے پہلے کونسلر منتخب ہوئے ۔

چوھدری شریف وڑائچ

چوھدری شریف وڑائچ تدریس کے شعبے سے وابستہ تھے۔ آپ چوھدری اور منشی کے لقب سے مشہور ہوئے۔ آپ نے اپنی سخاوت دور اندیشی اور عدل کی وجہ سے شہرت پائی۔ آپ نے ہمیشہ مظلوم کا ساتھ دیا اور ظالم کے ہاتھ کو روکا۔ آپ کی اہلیانِ دیہہ کے لیے بے پناہ خدمات کی وجہ سے آپ کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

بابا بوٹے شاہ سرکار

بابا بوٹے شاہ سرکار چوکنانوالی کی معروف روحانی شخصیات میں سے تھے۔ آپ کا ۲۲مارچ کو انتقال ہوا۔ اس دن ہر سال آپ کے مزار اقدس پر میلہ منعقد ہوتا ہے جس میں آپ سے عقیدت رکھنے والے قرب وجوار سے حاضر ہوتے ہیں اور مختلف انداز میں آپ سے اپنی عقیدت کا اظہار کرتے ہیں۔

دیگر مشہور شخصیت

چوہدری غلام رسول وڑائچ (مرحوم )

حاجی عمر حیات وڑائچ (سابق کونسلر)

سید غلام عباس شاہ (معروف سیاسی رہنما)

حاجی سخی محمد وڑائچ

حاجی عارف حسین وڑائچ (سابق کونسلر)

ملک غلام عباس (سابقہ چیئرمین عشرہ زکوٰۃ کمیٹی چک13)

ملک جبران (ایڈووکیٹ ہائی کورٹ)

محمد نواز کھو کھر (سابقہ کونسلر)

ماسٹر نواز انصاری (ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ)

چوھدری قمر وڑائچ (سابقہ کونسلر)

وحید احمد مچھیانہ (ایل ایل ایم)

اورنگ زیب وڑائچ

فوجی نذیر وڑائچ

ماسٹراعجاز وڑائچ (ایکس ہیڈ ماسٹر)

حاجی غلام عباس وڑائچ مرحوم (معروف سیاسی رہنما)

ظفر احمد وڑائچ (سابقہ کونسلر )

ڈاکٹر طاہر عباس حاجی انصر وڑائچ (سابقہ کونسلر)

چوہدری نذیر حسین وڑائچ مرحوم ( ایکس فاریسٹ آفیسر)

غلام عباس وڑائچ (صدر پاکستان اوورسیز فورم پرتگال)

عاصم علی مچھیانہ (ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ)

ملک آصف جاوید بشارت دھوتھڑ (سیکرٹری ٹو ایم این اے)

ماسٹر محمد بوٹا وڑائچ (ایکس ایس ایس ٹی ٹیچر)

شاہزیب عارف وڑائچ (ایڈووکیٹ ہائی کورٹ)

مظہر حسین وڑائچ (ایکس کرنل)

عارف درویش(مرحوم )

راجہ تنویر اقبال

ملک الطاف حسین رضی اللہ گجر ( سی ٹی ڈی)

فیاض احمد وڑائچ (بانی ممبر چوکنانوالی ویلفیئر سوسائٹی)

فاروق عباس وڑائچ

(آفیسر SNGPL) مشتاق دھدرا

عزیز احمد وڑائچ

چوہدری خالد وڑائچ (معروف سیاسی رہنما)

مساجد

یہاں پر مختلف مکاتب فکر کے لوگ آباد ہیں جو مختلف نظریات رکھنے کے باوجود ہمیشہ امن اور رواداری کو ترجیح دیتے ہیں۔ یہاں تین مساجد ہیں جن میں دو کا تعلق بریلوی اور ایک کا تعلق اہل تشیع مکتب فکر سے ہے۔ بچوں کی دینی تعلیم و تربیت اور حفظ و ناظرہ کے لیے ایک مدرسہ مدرستہ المدینہ کے نام سے بھی موجود ہے۔

فلاحی ادارے

کسی بھی گاؤں میں فلاحی ادارے یا تنظیم کا موجود ہونا وہاں ترقی کے راستے ہموار کرتا ہے۔ اسی سوچ کو مدنظر رکھتے ہوئے اک فلاحی تنظیم چوکنانوالی ویلفیئر سوسائٹی کا قیام مئی ۲۰۲۲ میں عمل میں لایا گیا۔ اس کے بانیان میں فیاض احمد وڑائچ اور بھائی غلام عباس وڑائچ شامل ہیں چوکنانوالی ویلفیئر سوسائٹی اپنے قیام سے لیکر اب تک بہت سے فلاحی پراجیکٹس مکمل کر چکی ہے۔ اس میں زیادہ تر پراجیکٹ بھائی غلام عباس سپانسرز کرتے ہیں ۔

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by Fiaz Ahmad Warraich

kuthiala khurd

Pandowal Bala پانڈووال بالا

Pandowal Bala پانڈووال بالا

Info By: Shansha Usama

Location

The village Pandowal Bala پانڈووال  بالا is located near Kuthiala Shaikhan in Tehsil & District Mandi Bahauddin. It is a historical village.

Neighbouring Villages:

Sources Of Income

The majority of the villagers are engaged in agriculture. Some people also work as labourer. most of the youth of the villagers are employed abroad.

Major Casts

The majority of the villagers belong to the Ranjha family while there are some other tribes like

  • Ranjha
  • Gondal
  • Tarar
  • Kadhar
  • Gheba
  • Sial
  • Makhen
  • Bhinder
  • Chadhar
  • Wraich
  • Hanjra
  • Lillah
  • Miany
  • Lohar
  • Mochi
  • mahajar
  • Kasbi
  • Kumhar
  • Muslim shaikh
  • Qureshi
  • Darzi
  • Machii
  • Taili
  • Nai

Pakistani Village Pictures: Tobacco crop in a village - Photos of Pakistani Villages

Famous Personalities:

  1. Ch. Sultan Mahmood Ranjha
  2. Ch. Abid Hussain Numberdar
  3. Ch. Aslam Sardar Tarar
  4. Ch. Allah Bakhash Gondal
  5. Ch. Yasir Arfat Gondal
  6. Ch. Ahmad khan Ranjha
  7. Ch. Haroon Gondal
  8. Ch. Sajid Imran Sial
  9. Ch. Mansha Gheba
  10. Ch. Aslam Ranjha
  11. Ch. Abass Ranjha
  12. Ch. Aslam Mutali khan Ranjha
  13. Ch. Ishtiaq Ahmad Ranjha Numberdar
  14. CH Sikandar Hayat Ranjha
  15. Ch. Manak Ali Ranjha
  16. Ch. Sajjid Ranjha Numberdar
  17. Ch. Sanawar Iqbal Ranjha
  18. Ch. Noraiz Ahsan Ranjha
  19. Ch. Basheer Mutali khan Ranjha
  20. Ch. Azhar Sohail Ranjha
  21. Ch. Muhammad Yousaf Gondal (PWS)
  22. Ch. Riaz Ahmad Ranjha
  23. Ch. Muhammad Nawaz Ranjha
  24. Ch. Umer Hayat Numberdar
  25. Ch. Tahir Mahmood Makhen
  26. Ch. Munawar Iqbal Ranjha
  27. Ch. Mumtaz Ahmad Gondal
  28. Ch. Azhar Pervaiz Ranjha
  29. Ch. Zubair Ahmad Ranjha
  30. Ch. Farhat Naveed Ranjha
  31. Ch. Mansha Bhinder
  32. Ch. walait Ranjha
  33. Ch. Oranzaib Ranjha
  34. Ch. Liaqat Ali Ranjha
  35. Ch. Fathy Muhammad Ranjha
  36. Ch. Zafar Iqbal Ranjha
  37. Ch. Muhammad Ashraf Kadhar
  38. Ch. Mazhar Iqbal Sial
  39. Ch. Imtiaz Ahmad Waraich
  40. Ch. Amjad Shehzad Ranjha
  41. Ch. Zulfqar Ali Ranjha
  42. Ch. Muhammad Azam Ranjha
  43. Ch. Iftikhar Ahmad Gondal
  44. Ch. Shokat Ali Lillah
  45. Ch. Muhammad Ashraf Ranjha
  46. Ch. Gulam Ali Gondal
  47. Ch. Ijaz Ahmad Lillah
  48. Ch. Zafar Ranjha ASI
  49. Ch. Shafqat Javeed Tarar
  50. Ch. Qaisar Farooq Ranjha
  51. Ch. Awais Ranjha
  52. Ch. Faisal Zulfiqar Ranjha

Educated People

  • Zahid Sardar Ranjha (principle Govt. Islamia High school)
  • Muhammad Yousaf Gondal (Govt. Teacher)
  • Master Amjad Ranjha (Govt. Teacher)
  • Master Iftikhar Ranjha(Govt. Teacher)
  • Master Zafar Kadhar(Govt. Teacher)
  • Master Afzal Kadhar (Govt. Teacher)
  • ADV Waqas Ranjha (Govt. Teacher)
  • Hammad Ul Umer Hamid Ranjha(M.A Education)
  • Zafer Iqbal Ranjha(Railway Officer)
  • Shoaib Ahmad Ranjha(Inspector)
  • Sikander Hayat (Manager)
  • Muzamal Shezad Ranjha (Punjab Police)
  • Sohail Ranjha (Dr)
  • Mohsin Aftab Ranjha (Dr)
  • Hakeem Mustafa Ahmad Farooqi (Dr)
  • Farhat Naveed Ranjha (Income Tax)
  • Imran Ashraf Ranjha (Punjab Police)
  • Zafar Iqbal Ranjha (Punjab Police)
  • Safder Iqbal Ranjha (Punjab Police)
  • Syed Qamar Gillani(Punjab Police)
  • Waseem Nawaz Ranjha (FIA)
  • Waqas Tanveer Ranjha(Punjab Police)
  • Sheezad Asghar Tarar(Punjab Police)
  • Shahansha Usama Ranjha

School

Govt. Islamia High School Pandowal Bala

Govt. Girls High School Pandowal Bala

Pandowal Welfare Society

پانڈووال ویلفیئر سوسائٹی ایک منافع بخش اور غیر سیاسی فلاہی تنظیم ہے جس کا مقصد مستحق لوگوں کی کسی بھی قیمت پر مدد کرنا ہے۔

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Please contact us for any correction/modification 

Information Provided By: Shansha Usama

Email Address: usamaranjha420@gmail.com

Last update: 10-12-2022

village rakh baloch kalan mandi bahauddin

Rakh Baloch Kalan رکھ بلوچ کلاں

Rakh Baloch Kalan رکھ بلوچ کلاں

Info by: Muhammad Usama Faraz

Introduction:

Village Rakh Baloch Kalan رکھ بلوچ کلاں is at East of Mandi Bahauddin city which is 10 KM far from Mandi Bahauddin city. Population of this village is about 12,000 people. 80% of the people of the village belong to the Rind tribe of the Baloch nation.

History:

According to the history from the book At the beginning of the 16th century, Humayun sought help from the Baloch Sardar Mir Chakar Khan for the purpose of conquering Delhi, then forty thousand Baloch army under the leadership of Sardar Mir Chakar Khan Rand helped Humayun in conquering Delhi.

After this victory, Baloch settlements were settled around Delhi. The ancestors of the current Rakh Baloch also moved from the current Balochistan and settled in Delhi at that time. The genealogy of the present Rakh Baloch goes back to Akbar Badshah with the title of Tir Taza Khan from Malik Muhammad Tir Taza Khan who received a sword and a vast territory as a reward.
Five sons of Malik Muhammad’s nephew named Taj Khan, Jafar Khan, Ismail Khan, Bahram Khan, and Sharif Khan.
Bahram Khan had no children. The descendants of these four brothers are settled in the present Rakh Baloch. There are four neighborhoods in the village called Taj Khani, Jafar Khani, Ismail Khani, Sharif Khani. They are relative to these four brothers

In 1947, they migrated from Delhi (ancestors of present Rakh Baloch people) and settled in Rakh Nihal Singh Clan, which was later renamed as Rakh Baloch Kalan.

Nearest Villages:

Famous Personalities of Village:

  • Haji Rafiq Baloch
  • Hakeem Umar Daraz Baloch Chairman (R) Subidar
  • Akhtar Baloch Member Nisar
  • Wing Commander Iftikhar Baloch
  • Doctor Surgeon Jamal Baloch THQ Phalia
  • Hafiz Siraj Ahmad Jalali
  • RJ Waqar Baloch (FM 94)

May Allah Bless This Village


Information Provided By:

Muhammad Usama Faraz

Email: musamafrazm@gmail.com

Last update: 20-10-2022

bagga pump

Bagga Pump بگا پمپ

Bagga Pump بگا پمپ

Information By: Chaudhry Awais Aura

Introduction:

Bagga Pump is a small village of district Mandi Bahauddin. It is situated on Malakwal road. Almost 11 km from city MBDin and 11 km from tehsil Mbdin. The union Council of this village is Ahla.

There are 3 mosques in Baga Pump. This village is situated on a canal from Jhelum river which goes towards Malakwal. The village is consists of 300 houses.

Nearest Villages

Main Casts

The main castes in Bagga Pump are (Aura Jutt Gondal)

  1. Warraich
  2. Auray
  3. Bagiane
  4. Monde Kay
  5. Haroo
  6. Panjotha
  7. Ilyas Kay

Famous people

  1. Chaudhry Ahmed Yaar Aura
  2. Chaudhry Mohsin Raza Gondal (Advocate)
  3. Ghulam Abbas (Numberdar)
  4. Chaudhry Awais Aura
  5. Master Muzaffar Gondal
  6. Nazar Muhammad Gondal
  7. Shakeel Ahmed Bagyana

Highly Qualified Personalities

  • Mohsin Raza Gondal (Advocate)
  • Master Faisal Qadir Gondal
  • Master Anjum Shahzad
  • Master Faisal Gondal
  • Hassan Musana Aura
  • Allama Bilal Warraich Mustafai
  • Salar Hassan Phapra (Police)
  • Engineer Safeer Ahmed Aura
  • Professor Sift-E-Hassan Bagyana
  • Dr. Hafiz Zeeshan Gondal
  • Dr. Waleed Gondal
  • Allama Hafiz Waqas Ahmaad Bagyana
  • Kanzal Abbas Phapra
  • Tasdaf Nadeem Gondal
  • Amir Shahzad

Social Personalities:

  • Eng. Shakeel Ahmed Bagyana
  • Eng. Safeer Ahmed Aura
  • Zeeshan Khizar Bagyana
  • Kashif Iqbal Gondal
  • Hassan Masana Aura
  • Mustansir Phapra
  • Zafar Iqbal
  • Naeem Warraich
  • Qasim Abbas Bagyana
  • Ahmed Yaar Aura
  • Awais Aura
  • Raiz Ahmad Bagyana
  • Qaisar Abbas Bagyana
  • Ijaz Ahmed Numberdar

Schools Madrisa:

  1. Govt. Model Primary School Bagga Pump for boy’s
  2. Govt. Insaf Afternoon School for girls
  3. Rising Star School Bagga Pump
  4. Dar Al Aloom Syeda Fatima Tu Zahra

Main Crops

  • Rice
  • Wheat
  • Potato
  • Sugar Cane

Problems of Villages:

  • Sui gas not available
  • High school not available
  • Staff not complete in govt School’s

There is Bagga Pump Ehsas Trust social society working in this village.

May Allah Bless This Village


bagga pumpInformation provided by: Chaudhry Awais Aura

Email Address: awaisaura.u@gmail.com

Contact No. 03488222004

Last edited on 11 August, 2022

Ainowal عینووال

 عینووال Ainowal

History:

The village Ainowal عینووال separated from Bhikhi with total population of 660 while household is 259. The post office of this village is Khutiala Sheikhan 

Nearest Villages:

  1. Bhikhi
  2. Mand
  3. Khutiala Sheikhan
  4. Diluwal

Casts:

  1. Gondal
  2. Warraich
  3. Sahi
  4. Sial

Famous Personalities:

  • Ch. Mukhtar Ahmad Gondal
  • Haji Bahadar Sardar ka (Ex. Member)
  • Ashfaq Ahmad
  • Haji Arshad Mehmood Gondal
  • Chaudhary Sultan Ahmed Gondal
  • Chaudhary Qaisar Mehmood Gondal
  • Chaudhary Rashid Ahmed Gondal

Highly Qualified Personalities:

  1. Hassan Gondal (MBA)
  2. Irshad Gondal (DFO)
  3. Sikandar Aslam Gondal (SI CTD)
  4. Zafar Gondal (ASI)
  5. Nazir Sahi (Ex. Inspector)
  6. Rafaqat Ali Warraich (Punjab Police)
  7. Zaighum Raza (Pakistan Airforce)
  8. Shahzad Umar Gondal (Forest Officer)
  9. Usman Umar Gondal (Advocate)

Social Personalities:

  • Shahzaib Mukhtar Gondal
  • Ali Saqlain Numberdar (ISF Member)
  • Abrash Gondal

Institutes:

Govt. Primary School Ainowal

Mosques:

  1. Jamia Masjid Abu Bakar
  2. Masjid Rehmat Ul Alameen
  3. Masjid Ameer Hamza
  4. Masjid Haq Char Yaar

Darbars/Shrines:

Pir Mian Noor Shaheed

Bazars/Markets:

There are 5 Karyana shops and 3 Barber Shops

Main Bradaries

  • Alla Din
  • Muhammad din Kay
  • Mehram Kay
  • Akbar Kay
  • Numberdar
  • Ameer Kay
  • Nadar Kay
  • Khaire Kay

Industries/Companies

  1. Aljannat Marriage Hall
  2. Aljannat Bricks company
  3. Aljannat Petroleum
  4. Baqar and Sons Tuff Tiles
  5. Baqar and sons Industries Pvt. Ltd.
  6. Awais Gondal Petroleum
  7. Zaman Petroleum
  8. Anmol Petroleum
  9. Subhan Dera Shinwari Hotel
  10. Roof Top Pizza Vally

May Allah Bless this village


Information Provided By: Ch. Shahzaib Gondal
Information updated on 13 August, 2022

Dhoke Malowal – Tibbi Malowal

Dhoke Malowal ڈھوک مالووال

Tibbi Malowal ٹبی مالووال

Information by Muhammad Fiaz

Location:
The village Dhok Malowal or Tibbi Malowal is situated in tehsil Mandi Bahauddin.
Famous personalities  
  • Sai Muhammad Sahi (late)
  • Pervaiz sahi (late)
  • Chudhary Javed sahi
  • Muhammad Younas Sahi ( Businessman)
  • Muhammad Fiaz (Ret. Teacher)
Major Casts:
  • Sahi (Majority)
  • Gondal
Major problems 
Built of streets, water Filtration plant  and high school is necessary .
Allah bless this village
Information provided by: Muhammad Fiaz
Phone No. number
Email Address: email
Last updated on: 24-07-2021

Khewa کھیوہ

Khewa کھیوہ

Information is provided by: Shoaib Sikandar

Location:

The village Khewa is situated in tehsil Mandi Bahauddin.Iin West, Muhabbat Pur Khewa, in East, Kaluwali, in south, Kuthiala Syedan, in North, Mong

Schools:

This village has three schools.

  • GHSS Khewa (Govt. Higher Secondary School Khewa)
  • GGHS Khewa (Govt. Girls High School Khewa
  • GGPS Khewa (Govt. Girls Primary School Khewa)

Educated Personalities:

  • Muhammad Ahsan Raza But (Teacher)
  • Muhammad Khan Bhoon (Teacher)
  • Sikandar Khan Bhoon (teacher)

Social Personalities of the village:

  1. Ch. Riasat Ali Bhoon (Nazim)
  2. Aurangzaib Bhoon (Advocate)
  3. Mohsin Ahsan Bhoon (Advocate)

Shrines:

Darbar Astana Alia Khewa (Peer Syed Fazal Haider Shah)

 

Allah bless this village. AAMEEN
This information is provided by: Shoaib Sikandar
Contact No. phone
E-mail address: shoaibsikanderbhoohn@gmail.com

Sivia سویہ


میری جان میری پہچان، میں ہوں سویہ، سویہ میرا نام

بہت میٹھے یہاں کے لوگ کرتے ہیں سب کو سلام

چھوٹے بڑے دارے، یہاں ہیں بہت سارے

کرتے ہیں لوگوں کی خدمت جہاں پر صبح وشام

میں ہوں سویہ، سویہ میری پہچان، سویہ میرا نام

ہیں  مہمان نواز، کرتے ہیں یہ بہادری کے کام

مصیبت میں لیتے ہیں ایک دوسرے کا ہاتھ تھام

ہیں بہت قابل اورمحنتی یہاں کے لوگ

دیس پردیس جہاں بھی ہوں کرتے ہیں بس کام

میں ہوں سویہ، سویہ میری پہچان، سویہ میرا نام

میٹھی زبان، ہے ان کی پہچان

دیکھ  لواک بار کر کے ان سے کلام

کبڈی، باکسنگ، کرکٹ، گھڑ سواری یا ہو والی بال

ہیں بہت مشہور اور ساری دنیا میں ہے ان کا اک مقام

میں ہوں سویہ، سویہ میری پہچان، سویہ میرا نام

بشیر احمد بھٹی,اختر سویہ اور بڑے بڑے نام

ہار ماننا نہیں ان کے خون میں شامل

جیتے ہیں اِنہوں نے  بڑے بڑے انعام

میں ہوں سویہ، سویہ میری پہچان، سویہ میرا نام

یہاں کے لوگ، ہیں سمجھدار، دنیادار ،ملنسار

سب کے لیےہے ان کا محبت بھرا  پیغام

زندگی کے ہر شعبہ میں  ہیں کامیاب

تعلیم میں بھی رکھتے ہیں اپنا ایک  نام

ہیڈماسٹر بشیر صاحب تھے سویہ کی شان

ان سے سب  کو  پیار ،  وہ  رکھتے تھے سب کا مان

میں ہوں سویہ، سویہ میری پہچان، سویہ میرا نام

ہیں اصول پرست،   دین  و دنیا پے قائم

مذہبی خدمات میں  بھی ہے ایک نام

حافظ عبدالرحمان ، حافظ عبدالرحمان

دربار سید رسول ہے روحانیت کی پہچان

ایک خدا پر ایمان، ہیں سب سچے مسلمان

سویہ میری جان، سویہ میری شان

میں ہوں سویہ، سویہ میری پہچان، سویہ میرا نام

سویہ

اُس زمانے میں یہ گاؤں ایک ٹیلے پر آباد تھا جو  موجودہ گاؤں سے ڈیڑھ کلومیٹر شمال میں واقع ہےاُس وقت یہاں حاصلاں والے کے میانے، اُن کی یہ زمین تھی اور اُن کے مُرید باگڑی اُن کے پاس رہتے تھے اور اُن کی خدمت کرتے تھے بعد میں جب مغل بادشاہ  اکبر اوردُلا بھٹی(رائے  عبداللہ خان بھٹی راجپوت)  کے درمیان لڑائی  ہوئی اور دُلا بھٹی کو پھانسی دی گئی  اور لڑائی میں کافی لوگ مارے گئے اسی لڑائی میں سوی سنگھ بھی مارا گیا جو کہ دُلا بھٹی کی اولاد میں سے تھا۔اُس وقت  وہاں سے لوگ بھاگ کر کئی اور جگہوں پر آباد ہوئے اور سوی سنگھ کی بیوی یہاں اس ٹیلے پر آئی  اور کسی طرح وہ  حاصلاں والے میانوں کے پاس پیش ہوئی اور اُن کو اپنی ساری آپ بیتی سنائی اور اُن کے پوچھنے پر کہ تم  کو کہاں کس جگہ جانا ہے تو اُس نے بتایا کہ میں کہیں بھی نہیں جانا چاہتی میں یہی رہنا  چاہتی ہوں۔ پھر اُن کے کہنے پر وہ مسلمان ہوگئی اُس کے تین بیٹے تھے محمدا، نورا اور گودھا۔ موجودہ گاؤں میں جو مشرق میں لوگ آباد ہیں وہ محمدا کی اولاد ہیں۔  گاؤں کے باہر جو ہاشم کے ، لنگر کے  اورگاؤں کے مغرب میں جو ہیں وہ نورا کی اور گودھا کی اولاد ہیں گودھا نے اپنی پسند کی شادی کی، محمدا کی شادی ہریےآل ہوئی   اور نورا کی شادی بھلوال سرگودھا میں ہوئی اُس وقت بہت زیادہ بارشیں ہوئی اور یہ سب موجودہ گاؤں والی جگہ پر آ کر آباد ہوگئےاُس وقت یہاں پر ہندو آباد تھے اور یہ زمین حاصلاں والے میانوں نے  چار حصوں میں تقسیم  کی ،تین حصے تینوں بھائیوں نورا، محمدا اور گودھا میں تقسیم کر دی اور زمین کا چوتھا حصہ باگڑیوں کو دیا گیا  کیونکہ اُس وقت ڈاکےپڑتے تھے اور گاؤں کو بچانے کے لیے باگڑیوں کو گاؤں کےاردگرد شمال، مغرب اور جنوب  کی باہروالی زمین دی گئی۔ تقسیم ہند کے وقت یہاں پر ہندو، سکھ اور مسلمان آباد تھے۔ تقسیم کے بعد ہندو اور سکھ بھارت چلے گئے اور وہاں سے گجر ہجرت کرکے یہاں اُن کی جگہ جو کہ گاؤں کے سنٹر میں تھی آکر آباد ہوئے باقی جو اس گاؤں میں ذاتیں ہیں ان میں گوندل، وڑائچ اور تارڑ  بھی شامل ہیں یہ بعد میں ورثہ پر ملنے والی زمین یا ویران پڑی زمین پر یہاں آکر آباد ہوگئےاس گاؤں کا رقبہ کافی بڑا ہے جو کہ میانہ چک، سندھانوالہ، شیخو چک اور  مغرب میں نہر کے پار تک تھا جہاں چک شیر محمد آباد ہے جنوب میں یہ رقبہ ڈھوک مراد سے آگے تک تھا  چونکہ اس وقت نہری نظام نہیں تھا اور زیادہ تر زمین غیر آباد تھی اور اِس زمین پر جنوب میں گجر موجودہ سندھانوالہ میں آکر آباد ہوئے۔ بعد جب انگریزوں نے یہاں نہری نظام بنایا تو یہاں  اورآبادیاں بننے لگیں۔

پاکستان بننے سے پہلے یہاں ایک بشیر احمد بھٹی نمبردار تھاجو بہت لمبی اور اونچی چھلانگ لگانے میں ماہر تھااور کبڈی کا بہترین کھلاڑی بھی تھا اُس کے متعلق مشہور تھا کہ وہ بیلوں کی جوگ (ہل چلانے والی بیلوں کی جوڑی) کو چھلانگ لگا کر پھلانگ لیتا تھا  وہ اپنے کھیل اور چھلانگ کی وجہ سے اتنا مشہور تھا کہ انگریزوں نے اُس کو پرندے (برڈ آف انڈیا) کا خطاب دیا اور اُس  کو نیو دہلی سے ایک گولڈ میڈل انعام بھی ملا۔ اُس کے بعد اِس گاؤں  میں کبڈی کے کافی مشہور کھلاڑی پیدا ہوئے جن کی وجہ سے یہ گاؤں سارے پاکستان حتیٰ کہ پوری دنیا میں مشہور ہے۔

اس کے علاوہ یہ گاؤں اپنے چوپالوں (داروں)  اور مہمان نوازی کی وجہ سے پورے پنجاب میں مشہور تھا اور یہاں ایک بہت بڑا تاریخی دارا  (چوپال)ہے جہاں شروع سے دس بارہ چارپائیاں مہمانوں کے لیے موجود رہتی تھیں اور یہ گاؤں اپنی اس مہمان نوازی کی وجہ سے بھی پورے علاقہ بلکہ پورے پنجاب میں مشہور ہے۔

اس گاؤں  کی ایک اور خوبی یہاں کے پہلوان  اور کبڈی کے کھلاڑی بھی ہیں   اس گاؤں کے پہلوانوں میں  (محندا )محمدکشمیری، حیدر سویہ،  محمد حسین محندا، اصغر، نادر، منظور، اکرم، نواز باگڑی، مہندی خاں بھٹی، اختر ولد لال باگڑی، غلام رسول موچی عرف کاشو، عنایت پھیلے دا اور موجودہ پہلوان کھلاڑیوں میں  جوادافضل باگڑی(انٹرنیشنل کھلاڑی جرمن کبڈی ٹیم) ،   شفقت، قیصر محمود گجر  وغیرہ شامل ہیں

حال ہی  میں اس گاؤں کاایک اور اُبھرتا ہوا ستارہ  انٹرنیشنل باکسنگ کھلاڑی شجاعت منظور گوندل بہت مشہور ہوا ہےجو اٹلی کی نیشنل باکسنگ ٹیم میں شامل ہے

باقی کھیلوں جن میں کرکٹ،  والی بال، گھوڑ سواری میں بھی  یہ گاؤں ایک نمایاں مقام رکھتا ہے۔

گاؤں کی ایک اور بہت بڑی خوبی یہ بھی ہے کہ یہاں کسی کا ویر(خاندانی دشمنی) نہیں ہے۔ لوگ  بہت سمجھدار، دنیادار ،ملنساراور امن پسند ہیں

اس گاؤں میں بہت پُرانےاور تاریخی ایک ہاسپٹل انسانوں اور ایک  جانوروں  کے لیےموجود ہیں ۔

اس کے علاوہ یہ گاؤں اپنے ٹیچرز  کی وجہ سے بھی بہت مشہور ہے یہاں کے ہیڈماسٹر بشیر صاحب بہت مشہور ہیں جنہوں نے اپنے گاؤں کےبہت سے نوجوانوں کو ٹیچنگ   اور باقی محکموں میں آنے میں مدد کی

اس گاؤں میں ایک گورنمنٹ  ہائی سکول لڑکوں اور ایک لڑکیوں کے لیے ہے۔ اس کے علاوہ تین پرائیویٹ سکول  موجود ہیں

باقی مذہبی خدمات میں حافظ عبدالرحمان صاحب بہت مشہور اور ناقابلِ فراموش ہستی  ہیں جنہوں نے مذہبی درس وتدریس سے پورے گاؤں کو مستفید کیا

اس گاؤں کی ایک اور خوبی یہ ہے کہ یہاں پر ایک ہیڈ موجود ہے جہاں سےچار نہریں نکلتی ہیں جن میں ایک بڑی نہر اور تین چھوٹی نہریں ہیں۔ جو اس گاؤں کےعلاوہ آس پاس کے سب دیہاتوں کی زمین کو سیراب کرتی ہیں۔ پھالیہ سے گزرنے والی نہر بھی اسی ہیڈ سویہ سے ہی نکلتی ہے

گاؤںمیں آٹھ مساجد ہیں جن میں سے تین جامع ہیں جہاں دینی تعلیم بھی دی جاتی ہےاس کے علاوہ ایک جامعتہ اللبنات بھی موجود ہے

یہاں ایک دربار سید رسول بھی بہت تاریخی اور مشہور ہے

گاؤں کا موجودہ حدوددربعہ۔شمال میں شاہ کُلی، مشرق میں شیخو چک، مغرب چک شیر محمد اور جنوب مشرق میں سندھانوالہ، جنوب مغرب میں ڈھوک مُراد واقع ہیں

اس گاؤں کی آبادی دس  ہزارافراد پر مشتمل ہے