Skip to content Skip to left sidebar Skip to footer

Tag: mandi bahauddin villages name

village Chhawind Chawind Mandi Bahauddin

Chhawind چَھوِنڈ

گاؤں کا نام چَھوِنڈ

By: کاشف گوندل

تعارف

ہمارے گائوں کا نام چَھوِنڈ Chhawind ya Chawind ہے۔ بادشاہ پور اور کرتووال اس گاؤں کے بیٹے ہیں یہ گاؤں ہریاساہناشمہاری اور بادشاہ پور کے درمیان ہے۔ گاؤں کے لوگوں کا زیادہ تر پیشہ کاشتکاری ہے۔ گاؤں کے تقریباً 250/300 گھر ہیں۔ لوگ بہت مہمان نواز ہیں اس گاؤں میں رہنے والے لوگوں میں کثیر تعداد سید برادری اور گوندل برادری ہے۔ چند گھر تارڑ ‘ وڑائچ اور کررڑ برادری کے ہیں۔ ایک ۔پرائمری سکول اور دو جامع مساجد ہیں اور دو امام بارگاہ ہیں

village Chhawind Chawind Mandi Bahauddin

گائوں کے قریبی دیہات:

شمہاری

چک نمبر 21

واڑہ عالم شاہ

ساہنا

بادشاہ پور

گاؤں کی مشہور شخصیات

محمد یار ولد سردار خاں گوندل ( مرحوم)

سید ظہور شاہ (مرحوم)

ڈاکٹرسید قیصر عباس شاہ (heart specialist)

وقاص نذر گوندل (ایڈووکیٹ)

ارشد محمود گوندل (ایڈووکیٹ)

سید تقویم شاہ (LLB PHD) UK

زوار عباس تارڑ

اظہر عباس وڑائچ

کاشف گوندل(سردارےکا)

حسن نواز گوندل (مرجےکا)

ذیشان مظہر گوندل (راحمے کا)

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by Kashir Gondal

Email Address: gondalkashif98@gmail.com

کسی بھی قسم کی درستگی کیلئے کمنٹس کریں یا ہمیں ای۔میل کریں۔ شکریہ

Last updated on 24-06-2024

mojianwala

Mojianwala موجیانوالہ

Mojianwala موجیانوالہ

By: Hassan

Village History:

The Village Mojianwala موجیانوالہ is located on the boundary of District Mandi Bahauddin and District Gujrat. It is an old town and famous for its majority population belongs to Shia sector. Almost all of the residents belong to this sect. It is famous for its Azadari world wide. Commonly it is famous as Chilalianwala, Mojianwala as both villages are connected.

Main Casts:

  • Gujjar
  • Syed
  • Mochi
  • Tarkhan
  • Jogi

etc.

mojianwala

Highly Qualified Personalities:

  1. Husnain Abbas Kazmi (currently serving as Senior Civil Judge)
  2. Syed Raees Naqvi (First CSP of Mojianwala currently he is serving in Lahore)
  3. Ch. Zafar Iqbal (Additional Session Judge)
  4. Syed Hasan Raza (Deputy District Prosecutor)

Social Welfare Organizations

  • Helping Hands

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by: Hassan

Email Address: alex.smith2694@gmail.com

نوٹ: کسی بھی قسم کی درستگی کیلئے کمنٹس کریں یا ہمیں ای۔میل کریں۔ شکریہ

dady

Dady دادے

Dady دادے

By: عدنان اشرف تارڑ

Village History: گائوں کی تاریخ

دادے Dady گاؤں پھالیہ سے جنوب مغرب میں بھیرووال روڈ سے 3 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ایک سر سبز وشاداب گاؤں ہے۔ ۔اس کی کل آبادی تقریبا 2،000 نفوس پر مشتمل ہے۔ گاؤں میں اکثریت تارڑ برادری کی ہے۔ اس کے علاوہ گوندل اور وڑائچ ,سندھوں برادی بھی موجود ہے۔

گاؤں کے لوگوں کا ذریعہ معاش  کھیتی باڑی کے علاوہ تجارت وغیرہ ہے اور گاؤں کے بیشتر نوجوان بیرونِ ملک مقیم ہیں۔ پورے گاؤں میں دیوبندی مسلک کے علاوہ3 گھر شعیہ برادری کے بھی ہیں  لیکن گاؤں میں کوئی مذہبی انتشار نہیں ہے۔ اس گاؤں میں Crime Rate صفر ہے۔ گاؤں کوئی لڑائی جھگڑا نہیں نہ کوئی پیشہ ور مجرم ہے

Main Casts: مشہور ذاتیں

تارڑ، وڑائچ، سندھو، گوندل، اس کے علاوہ نائی، موچی، ترکھان، ماچھی، لوہار، دیندار، کاسبی، کمہار برادری بھی موجود ہے

Social Personalities of Village: سماجی شخصیات

احمد دین تارڑ نمبردار مرحوم

حاجی محمد اشرف تارڑ

سکندر حیات تارڑ نمبردار

عمر حیات تارڑ

باطی خاں وڑائچ

اعجاز احمد گوندل

عدنان اشرف تارڑ

حسین علی گوندل

خاور گوندل

کفایت اللہ تارڑ

عادل شیر تارڑ

رضوان اکبر تارڑ

وقاص اسلم تارڑ

سید وارث حسین شاہ

اختر تارڑ

احسان اللہ گوندل

اسحاق تارڑ

مبشر تارڑ

Highly Qualified Personalities: پڑھی لکھی شخصیات

ماسٹر ریاض گوندل ریٹائر ہیڈ ماسٹر

اخلاق احمد تارڑ پنجاب پولیس

 صفدر تارڑ ASI پنجاب پولیس

رضوان اسلم ترکھان

اسجد محمود سندھو

محسن علی مانی

dady

Schools and Colleges: سکول، کالجز

گورنمٹ بوائز پرائمری سکول

گورنمٹ گرلز پرائمری سکول

مدرسہ بوائز جامعہ رحمنیہ دادے

مدرسہ گرلز جامعہ رحمنیہ دادے

Sports: مشہور کھیلیں

بالی وال، کرکٹ، کبڈی

Main Crops: اہم فصلیں

کندم، چاول، شوگر کین

Problems of the Village: گائوں کے مسائل

گیس ،سیورج

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by عدنان اشرف تارڑ

Email Address: adnantarar511@gmail.com

Contact No. 03008832509

نوٹ: کسی بھی قسم کی درستگی کیلئے کمنٹس کریں یا ہمیں ای۔میل کریں۔ شکریہ

village kot hast khan mandi bahauddin

Kot Hast کوٹ ہست

Kot Hast کوٹ ہست

By: Farhan Mazhar

Introduction:

Village Kot Hast کوٹ ہست also called as Kot Hast khan is in tehsil Phalia, District Mandi Bahauddin.

Neighboring Villages:

village kot hast khan mandi bahauddin

Major Casts:

  • Gondal

Social Personalities:

  • Nasir Gondal Wali ka
  • Farhan Gondal (Hast Ka)
  • Muhammad Iqbal Gondal
  • Muhammad Aslam Gondal

Highly Qualified Personalities:

  1. Nasir Gondal (Wali ka)
  2. Zafar Gondal (Advocate)
  3. Munawer Gondal (Advocate)
  4. Muzaffar Gondal
  5. Zohaib Hassan Gondal
  6. Farhan Mazhar Gondal
  7. Zahoor Ahmad
  8. Muhammad Azam Gondal
  9. Muhammad Nawaz

Schools and Colleges:

  • Government Primary school for boys And Girls

Main Crops:

  • Rise
  • Wheet

Problems of the Village:

  • Gas

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by Farhan Mazhar

Email Address: farhangondal147@gmail.com

Contact No. 03446062717

Kot islam mandi bahauddin

Kot Islam کوٹ اسلام

Kot Islam کوٹ اسلام

By: Moazzam Tufail

History:

Village Kot Islam کوٹ اسلام located in tehsil and district Mandi Bahudain this village is historical. Pakistan banny se Phely ader Sikh rety they bad main wo Hindustan chaley gey aor Muslim abaad ho gey. Is ki population 1,800 tak ha. source of income 40% agriculture and 60% People abroad France, Spain, Italy, Greece.

Main Casts:

  • Dillowane
  • Gondal
  • Gujjar
  • Hujjan
  • Sayyed
  • Mian
  • Warraich

Social Personalities:

  1. Riaz Ahmad Gondal (advocate)
  2. Riaz Ahmad Hujjan (counselor)
  3. Tasawar Iqbal Hajjan
  4. Moazzam Tufail Gondal
  5. Ijaz Ahmad Gondal
  6. Ghulam Raza (Lamberdar)
  7. Syed Ajmal Shah
  8. Shehzad Ahmad (Girdawar)
  9. Zaka Ullah Warraich
  10. Hassan Fiaz Gondal
  11. Saqib Ijaz Gondal (South Africa)

Highly Qualified Personalities:

  1. Riaz Ahmad Gondal (Advocate)
  2. Moazzam Tufail Gondal (Civil Engineer In Bahrain)
  3. Hafiz Hassan Riaz Gondal (Advocate High Court)
  4. Dr. Tanzeela Riaz (P.hD)
  5. Imran Tufail Gondal (France)
  6. Main Akhtar (Advocate)
  7. Khurrm Shahzad
  8. Naveed Ul Hassan
  9. Aqib Ijaz Gondal (Electric Engineer)
  10. Mohsin Raiz Gondal (Software Engineer)

Kot islam mandi bahauddin

Social Welfare Organizations

  • Kot Islam Welfare Committee
  • Kot Islam Melad Committee

Schools and Colleges

  • Govts Girl High School

Main Crops:

  • Wheat
  • Rice
  • Sugar

Sports:

  • Kabaddi
  • Cricket

Problems of the Village:

  1. Gas
  2. Dispensary
  3. Transport
  4. Education
  5. Madrisa

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by Moazzam Tufail

Email Address: mozaimtufailgondal55678@gmail.com

Contact No. 923443503499

Please comment for any correction or send us email. Thank you

village lak tribe

Lak لک

Lak لک

By: Zaheer Akhtar

History:

The Lak لک tribe is spread all over the world. But most of the Lak tribes are found in abundance in Arab countries. There are an estimated two million tribes in Iran and quite a few in Iraq. People of the Lak race are bold, courageous and fearless in nature.

In Pakistan, Laks are found in large numbers in various parts of the country and mostly in Sargodha in Punjab. One Lak village is located in Tehsil Phalia District Mandi Bahauddin. There are quite a number of Laks in this village who are very fond of Chaudharahat. According to a genealogy, it is believed that the people of this village came from the village of Lak in Sargodha.

لک قبیلہ پوری دنیا میں پھیلا ہوا ہے لیکن زیادہ تر لک قبائل عرب ممالک میں کثرت سے پائے جاتے ہیں ایران میں ایک اندازے کے مطابق بیس لاکھ قبائل اور عراق میں بھی کافی حد تک پائے جاتے ہیں لک نسل کے لوگ دلیر جرات مند اور نڈر طبعیت کے حامل ہیں پاکستان میں لک ملک کی محتلف حصوں اور زیادہ تر پنجاب میں سرگودھا میں کافی تعداد میں لک نسل میں پائے جاتے ہیں ۔۔۔۔ ایک لک گاؤں تحصیل پھالیہ ضلع منڈی بہاوالدین میں واقع ہے اس گاؤں میں کافی تعداد میں لک موجود ہیں جو بہت زیادہ چودھراہٹ کے شوقین ہیں ایک شجرہ کے مطابق  لوگوں کا قیاس ہے کہ اس گاؤں کے لوگ سرگودھا کے گاؤں لک سے آئے ہیں۔

Nearest Villages:

Schools:

  1. Govt. Girls Community Model Elementary School (GGCMES Lak)

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by Zaheer Akhtar

Email: zaheerakthar9654@gmail.com‎

کسی بھی قسم کی درستگی کیلئے کمنٹس کریں یا ہمیں ای۔میل کریں۔ شکریہ

Chak No. چک نمبر 13 (Chokananwali)

Chak No. 13 (Chokananwali)

Chak No. 13 (Chokananwali) چک نمبر 13

By: Fiaz Ahmad Warraich

!تاریخی پس منظر

۱۸۵۷ کے بعد برصغیر پر برطانوی راج قائم ہوا تو انگریز حکومت نے پنجاب کا زرعی سروے کیا تو پتہ چلا کہ پنجاب کا بڑا حصہ پہاڑی ریگستانی اور تھلوں کی سر زمین ہے۔ یہ تمام اراضی کراؤن لینڈ قرار دی گئی اس بنجر زمین کو کارآمد بنانے کے لیے انگریز حکومت نے نہری نظام کا عظیم منصوبہ بنایا اور اسی منصوبے کے تخت۔ ۱۹۱۳میں اپر جہلم نہر دریائے جہلم سے نکالی گئی۔ اسکا مقصد گجرات منڈی بہاوالدین اور سرگودھا کے غیر آباد میدانی علاقوں کو سیراب کرنا تھا۔ اس نہر کی کھدائی کے دوران ہزاروں ایکڑ اراضی زیر آب آئی۔ جن لوگوں کی زمینیں نہر میں آئی انھیں برطانوی حکومت نے متبادل رقبے الاٹ کیے اور ایک بہت بڑی لوگوں کی آبادی ہجرت کرنے پر مجبور ہوئی۔ ہمارے آباء واجداد بھی انھیں لوگوں میں سے تھے۔ انھیں منڈی بہاوالدین میں Chak No. 13 چک ۱۳ کہ مقام پر رقبے الاٹ ہوئے اور یہاں آ کر آباد ہوگئے۔

آبادکاری

گاؤں کی تمام آلاٹ شدہ اراضی غیر آباد تھی ہر طرف گھاس پھوس اور جھاڑیاں ہی جھاڑیاں تھیں جہاں آکی اور بھچر کے مقامی لوگ بھینس چرایاں کرتے تھے۔ جسے یہاں کہ کسانوں نے اپنی انتھک محنت اور کڑی مشقت کہ بعد آباد کیا اور قابلِ کاشت بنایا تاکہ گاؤں کی معاشی سرگرمیوں کا پہیہ چل سکے۔

جغرافیہ

یہ مین سرگودھا روڈ سے ۶ کلومیٹر کے فاصلے پر مغرب کی جانب واقع ہے۔ اس کے مشرق میں شیخ چگانی مغرب میں آکی جنوب میں بھچر اور شمال میں چک نمبر ۱۲واقع ہیں۔

رقبہ

گاؤں کا مجموعی زرعی رقبہ تقریباً ۳۷مربعے ہے جس جگہ پر گاؤں آباد ہے یہ مربع نمبر ۲۲ ہے۔

آبادی

۲۰۲۳کی مردم شماری کے اعداد و شمار کے مطابق کل آبادی ۲۵۰۰اور گھرانوں کی تعداد ۳۰۰ہے

چوکنانوالی کی وجہ تسمیہ

اپر جہلم کی تعمیر کے دوران گجرات کے بہت دیہات متاثر ہوئے۔ انھیں متبادل رقبے الاٹ کر مختلف چکوں میں بسایا گیا جو لوگ چک ۱۳ میں آ کر آباد ہوئے ان میں اکثریت کا تعلق گجرات کے گاؤں چوکنانوالی سے تھا۔ اس وجہ سے یہ چک ۱۳ سے چوکنانوالی کہلانے لگا۔

برادریاں اور خاندان

یہاں پر مختلف برادریوں کے لوگ آباد ہیں اور مختلف پیشوں سے وابستہ ہیں جو اپنی معاشی اور معاشرتی ضروریات کے لیے ایک دوسرے پر انخصار کرتے ہیں۔ گاؤں کی سب سے بڑی برادری وڑائچ برادری ہے۔ اس علاؤہ

سادات

دھوتھڑ

گجر

چمیے

دھدرا

مچھیانے

گوندل

ملک

راجے

سپرا

مرزے

چوہان

انصاری

کمہار

مراسی

دھبے

ترکھان

بیگ

نائی

دیندار

ماچھی

مسلم شیخ

بھی آباد ہیں۔ ہر برداری مختلف خاندانوں میں تقسیم ہو جاتی ہے جو اپنی الگ الگ شناخت رکھتے ہیں جو عموماً خاندان کے بزرگ یا مشہور شخصیت کے نام پر ہوتی ہے۔ ان خاندانوں میں دادان کے سلطان کے داد کے فضل کے جمعہ کے میاں خاں کے میر داد کے شابل کے جمال دین کے سارو کے حاکو کے بوسال لمبر پھیلے دھروکوٹی چوھدرنے شامل ہیں ۔

ذریعہ معاش

معاش انسانی زندگی کا بنیادی جز ہے۔ دنیا میں زندگی گزارنے والا ہر انسان کوئی نہ کوئی ذریعہ معاش ضرور اختیار کرتا ہے۔ یہاں کی اکثریتی آبادی زمیندار ہے جو زراعت پیشے سے وابستہ ہیں جو کھیتی باڑی کے علاؤہ مال مویشی پالتے ہیں۔ کچھ پڑھے لکھے افراد گورنمنٹ سروس بھی کرتے ہیں جن میں محکمہ تعلیم اور پاک فوج کے شعبے قابل ذکر ہیں۔ اس کہ علاوہ ہنر مند افراد کی بہت بڑی تعداد بیرون ممالک میں مقیم ہے جن میں سعودی عرب دوبئی بحرین پرتگال سپین فرانس اٹلی جرمنی آسٹریلیا شامل ہیں ۔

مشاہیر

بابا اللہ لوک وڑائچ

بابا اللہ لوک وڑائچ اپنے زمانے کے مشہور پہلوان تھے۔ آپ قرب وجوار میں منعقد ہونے والے میلوں میں ویٹ لفٹنگ کے مقابلوں میں حصہ لیتے ۔آپ نے آکی میں منعقد ہونے والے اک مقابلے میں منڑی مٹی اٹھانے کا اعزاز اپنے نام کیا اور اپنے ہم عصر پہلوانوں میں اپنی منفرد پہچان بنائی جب گاؤں آباد ہوا تو گاؤں کے پہلے کونسلر منتخب ہوئے ۔

چوھدری شریف وڑائچ

چوھدری شریف وڑائچ تدریس کے شعبے سے وابستہ تھے۔ آپ چوھدری اور منشی کے لقب سے مشہور ہوئے۔ آپ نے اپنی سخاوت دور اندیشی اور عدل کی وجہ سے شہرت پائی۔ آپ نے ہمیشہ مظلوم کا ساتھ دیا اور ظالم کے ہاتھ کو روکا۔ آپ کی اہلیانِ دیہہ کے لیے بے پناہ خدمات کی وجہ سے آپ کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

بابا بوٹے شاہ سرکار

بابا بوٹے شاہ سرکار چوکنانوالی کی معروف روحانی شخصیات میں سے تھے۔ آپ کا ۲۲مارچ کو انتقال ہوا۔ اس دن ہر سال آپ کے مزار اقدس پر میلہ منعقد ہوتا ہے جس میں آپ سے عقیدت رکھنے والے قرب وجوار سے حاضر ہوتے ہیں اور مختلف انداز میں آپ سے اپنی عقیدت کا اظہار کرتے ہیں۔

دیگر مشہور شخصیت

چوہدری غلام رسول وڑائچ (مرحوم )

حاجی عمر حیات وڑائچ (سابق کونسلر)

سید غلام عباس شاہ (معروف سیاسی رہنما)

حاجی سخی محمد وڑائچ

حاجی عارف حسین وڑائچ (سابق کونسلر)

ملک غلام عباس (سابقہ چیئرمین عشرہ زکوٰۃ کمیٹی چک13)

ملک جبران (ایڈووکیٹ ہائی کورٹ)

محمد نواز کھو کھر (سابقہ کونسلر)

ماسٹر نواز انصاری (ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ)

چوھدری قمر وڑائچ (سابقہ کونسلر)

وحید احمد مچھیانہ (ایل ایل ایم)

اورنگ زیب وڑائچ

فوجی نذیر وڑائچ

ماسٹراعجاز وڑائچ (ایکس ہیڈ ماسٹر)

حاجی غلام عباس وڑائچ مرحوم (معروف سیاسی رہنما)

ظفر احمد وڑائچ (سابقہ کونسلر )

ڈاکٹر طاہر عباس حاجی انصر وڑائچ (سابقہ کونسلر)

چوہدری نذیر حسین وڑائچ مرحوم ( ایکس فاریسٹ آفیسر)

غلام عباس وڑائچ (صدر پاکستان اوورسیز فورم پرتگال)

عاصم علی مچھیانہ (ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ)

ملک آصف جاوید بشارت دھوتھڑ (سیکرٹری ٹو ایم این اے)

ماسٹر محمد بوٹا وڑائچ (ایکس ایس ایس ٹی ٹیچر)

شاہزیب عارف وڑائچ (ایڈووکیٹ ہائی کورٹ)

مظہر حسین وڑائچ (ایکس کرنل)

عارف درویش(مرحوم )

راجہ تنویر اقبال

ملک الطاف حسین رضی اللہ گجر ( سی ٹی ڈی)

فیاض احمد وڑائچ (بانی ممبر چوکنانوالی ویلفیئر سوسائٹی)

فاروق عباس وڑائچ

(آفیسر SNGPL) مشتاق دھدرا

عزیز احمد وڑائچ

چوہدری خالد وڑائچ (معروف سیاسی رہنما)

مساجد

یہاں پر مختلف مکاتب فکر کے لوگ آباد ہیں جو مختلف نظریات رکھنے کے باوجود ہمیشہ امن اور رواداری کو ترجیح دیتے ہیں۔ یہاں تین مساجد ہیں جن میں دو کا تعلق بریلوی اور ایک کا تعلق اہل تشیع مکتب فکر سے ہے۔ بچوں کی دینی تعلیم و تربیت اور حفظ و ناظرہ کے لیے ایک مدرسہ مدرستہ المدینہ کے نام سے بھی موجود ہے۔

فلاحی ادارے

کسی بھی گاؤں میں فلاحی ادارے یا تنظیم کا موجود ہونا وہاں ترقی کے راستے ہموار کرتا ہے۔ اسی سوچ کو مدنظر رکھتے ہوئے اک فلاحی تنظیم چوکنانوالی ویلفیئر سوسائٹی کا قیام مئی ۲۰۲۲ میں عمل میں لایا گیا۔ اس کے بانیان میں فیاض احمد وڑائچ اور بھائی غلام عباس وڑائچ شامل ہیں چوکنانوالی ویلفیئر سوسائٹی اپنے قیام سے لیکر اب تک بہت سے فلاحی پراجیکٹس مکمل کر چکی ہے۔ اس میں زیادہ تر پراجیکٹ بھائی غلام عباس سپانسرز کرتے ہیں ۔

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information provided by Fiaz Ahmad Warraich

Wara Alam Shah malakwal mandi bahauddin

Wara Alam Shah واڑہ عالم شاہ

Wara Alam Shah واڑہ عالم شاہ

By: Umar Farooq

Introduction:

The village Wara Alam Shah واڑہ عالم شاہ is in tehsil Malakwal, District Mandi Bahauddin. Amjad Alam Khan, the founder of Wara Alam Shah, who settled the village. The history of this village is known from an elder that this village came into existence about four hundred years ago.

The special thing about this village is that the school was built in Wada Alam Shah when there was no name or sign of the school until far away. A school was built here in 1920 through the tireless efforts of our honorable Mian Shah Muhammad Sahib, in which the dignitaries of the present day studied.

Wada Alam Shah village has a spacious playground for boys. Village has its own union council. There is also a hospital for humans and animals.

موضوع واڑہ عالم شاہ کا موجد امجد عالم خان ہےجس نے گاؤں آباد کیا تھا۔ اس گاؤں کی تاریخ ایک بزرگ سے پتا چلی ہے کہ یہ گاؤں تقریباً چار سو سال پہلے معرضِ وجود میں آیا تھا۔ واڑہ عالم شاہ تحصیل ملکوال ضلع منڈی بہاؤ الدین میں واقع ہے۔

واڑہ عالم شاہ کی خاص بات یہ ہے کہ واڑہ عالم شاہ میں سکول اس وقت بنا تھا جب یہاں پر دور دراز تک سکول کا نام و نشان بھی نہیں تھا۔ یہاں پر 1920 میں ہمارے محترم میاں شاہ محمد صاحب کی بے انتہا محنت کی وجہ سے سکول بنا تھا جس میں دور حاضر کے بڑے بڑے اعلیٰ عہدوں داروں نے تعلیم حاصل کی۔

واڑہ عالم شاہ گاؤں میں لڑکوں کے کھیلنے کے لیے وسیع و عریض میدان موجود ہے۔ واڑہ عالم شاہ گاؤں کی اپنی یونین کونسل موجود ہے۔ یہاں پر انسانوں اور جانوروں کا ہسپتال بھی موجود ہے۔

Wara Alam Shah malakwal mandi bahauddin

Main Casts:

  • Gondal

Majority of village belongs to Gondal community.

Social Personalities:

  1. Aamir Ijaz Akbar Gondal
  2. Ch. Akram Gondal
  3. Muddasir Gondal (Social Worker)
  4. Idress Gondal

Highly Qualified Personalities:

  1. Aamir Ijaz Akbar Gondal (Officer)
  2. Qaswar Usman (SHO Punjab Police)
  3. Adnan Amjad Gondal (Civil Judge)
  4. Dr. Khalid Masood Gondal (Professor Mayo Hospital Lahore)
  5. Mirza Farooq (Advocate)
  6. Dr. Ali Gondal (America)

Schools and Colleges:

  • Govt Girls High School
  • Govt High School

گاؤں میں لڑکیوں اور لڑکوں کا دسویں کلاس تک سکول ہے۔ لڑکوں اور لڑکیوں کا قرآن پاک کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے مدرسہ بھی قائم ہے۔

Culture:

The lifestyle of the people is very simple and sincere. All children and old people live together. Most of the young male and females are interested in reading, writing and sports.

واڑہ عالم شاہ گاؤں گاؤں کے لوگوں کا رہن سہن بڑا سادہ اور مخلصانہ ہے۔ سب ایک دوسرے کے ساتھ بچے بوڑھے مل جول کر رہتے ہیں۔ نوجوان لڑکوں کا زیادہ تر رجحان پڑھنے لکھنے اور کھیلوں میں ہے۔

Social Welfare Organizations:

Mian Shah Muhammad Welfare and Ehsaas Welfare have a major role in the development and prosperity of the village. Apart from this, many development works have been done.

گاؤں کی ترقی و خوشحالی میں اس وقت ایک بڑا کردار میاں شاہ محمد ویلفیئر اور احساس ویلفیئر کا ہے۔ان ویلفیئرز نے سارے گاؤں کی گلیوں کی مکمل تعمیر کروائی ہے۔ اسکے علاوہ بھی بہت سے ترقیاتی کام کروائے ہیں

Main Crops:

  • Paddy
  • Wheat
  • Sugarcane
  • Cotton

Any other thing about village:

May Allah Bless This Village (AAMEEN)


Information was provided by Umar Farooq

Email Address: gondalu026@gmail.com

Contact No. 03434164706

کسی بھی قسم کی درستگی کیلئے کمنٹس کریں۔